• Tuesday, December 11, 2018

Featured 144 stories:Remembering lives lost in Peshawar School Attack

Discussion in 'Pakistan's Internal Security' started by balixd, Dec 1, 2015.

  1. HariPrasad

    HariPrasad BANNED

    Messages:
    13,414
    Joined:
    Aug 5, 2013
    Ratings:
    +2 / 11,630 / -16
    Country:
    India
    Location:
    India

    Very touching. It really made me sad.
     
  2. CENTCOM

    CENTCOM PROFESSIONAL

    Messages:
    1,516
    Joined:
    Apr 30, 2010
    Ratings:
    +34 / 2,361 / -0
    Country:
    United States
    Location:
    United States
    The nation of Pakistan is set to observe the first anniversary of the terrorist attack on Army Public School (APS) on Dec 16, 2015. The terrorists left a permanent scar on the lives of many parents, siblings, and family members. When you read about how some of the families continue to struggle with the loss of their loved ones; you get a clear sense that many are yet to come out of the shock. The Peshawar school attack was one of the deadliest in Pakistan's history. No words can describe the evil nature of the attack. The terrorists claimed more than 150 lives on that dreadful day, and it is just heart wrenching to think that the children were the prime target.

    We can relate to the pain brought by the indiscriminate killings at the hands of the terrorists. The U.S. and Pakistan share a mutual stance against terrorism and condemn all acts of violence. President Obama again condemned the attack on APS during PM Nawaz Sharif’s visit to the U.S. in October. It is important to stand united against those who threaten the safety of our land and people. Our thoughts and prayers are with the families and friends of the APS victims. We remember everyone who was taken from on during that horrific act of terror. The pain may never go away, but we sincerely hope that the loved ones find the strength to remain strong.

    Ali Khan
    Digital Engagement Team, USCENTCOM
     
  3. Tipu7

    Tipu7 SENIOR MEMBER

    Messages:
    4,201
    Joined:
    Aug 8, 2014
    Ratings:
    +49 / 9,365 / -0
    Country:
    Pakistan
    Location:
    Pakistan
    FB_IMG_1450322814681.jpg
     
  4. Tipu7

    Tipu7 SENIOR MEMBER

    Messages:
    4,201
    Joined:
    Aug 8, 2014
    Ratings:
    +49 / 9,365 / -0
    Country:
    Pakistan
    Location:
    Pakistan
    FB_IMG_1450359751959.jpg
     
  5. SecularNationalist

    SecularNationalist SENIOR MEMBER

    Messages:
    2,413
    Joined:
    Feb 21, 2015
    Ratings:
    +4 / 2,915 / -11
    Country:
    Pakistan
    Location:
    Pakistan
    Well i am just speechless
     
  6. Neutron

    Neutron PDF THINK TANK: ANALYST

    Messages:
    1,289
    Joined:
    Jan 17, 2015
    Ratings:
    +42 / 1,894 / -0
    Country:
    Pakistan
    Location:
    Pakistan
    میرا بیٹا کہتا تھا کہ ماں جب میں فوج میں افسر بنوں گا تو سب تجھے سلیوٹ کریں گے۔ :

    اُس کی عمر 40 کے لگ بھگ تھی اور وہ پچھلے کئی گھنٹوں سے پاک فوج کے ایک سلیکشن سینٹر کے سامنے لگی نوجوانوں کی لمبی قطار میں کھڑی اپنی باری کا انتظار کر رہی تھی۔

    یہ آنٹی لگتا ہے اپنے بیٹے کی درخواست جمع کروانے آ گئی ہیں، لیکن شاید انہیں یہ نہیں معلوم کہ اپلائی کرنے کے لئے ان کے بیٹے کو خود آنا پڑے گا۔ ایسے بات نہیں بنے گی، احمد نے اپنے دوست سے کہا، یہ دونوں بھی صبح سے قطار میں کھڑے اپنی باری کا انتظار کرتے کرتے تھک چکے تھے۔

    ’’تو تم اُنہیں جا کر بتا کیوں نہیں دیتے کہ یہاں یوں خوامخواہ کھڑے ہونے سے کچھ نہیں ملنے والا، گھر جا کر اپنے بیٹے کو بھیجیں۔ بتایا ہے یار! وہ کہتی ہیں کہ میں جو آگئی ہوں۔ کیسے بھرتی نہیں کریں گے۔ ماں ہے ناں! بیٹے نے کہا ہوگا اور چل پڑیں۔ بیچاری کو یہ بھی نہیں معلوم کہ ابھی صرف بھرتی کے لئے درخواستیں جمع ہو رہی ہیں۔ بھرتی ہونے کے لئے تو نہ جانے ابھی اور کتنے مرحلوں سے گذرنا پڑے گا۔ پھر کہیں جا کر ہم میں سے چند خوش نصیب منتخب ہوں گے۔ احمد کو جتنا اُس عورت پر ترس آ رہا تھا اُتنا ہی اُس کے بیٹے پر غصّہ، مگر وہ کر بھی کیا سکتا تھا۔

    جی محترمہ! کیا آپ یہاں کسی کے فارم جمع کروانے آئی ہیں؟ نگرانی پر مامور ایک سپاہی نے اُس کے قریب آکر بڑے احترام سے پوچھا۔ وہ منہ سے تو کچھ نہ بولی، مگر اثبات میں سر ہلا کر سپاہی کے سوال کا جواب دے دیا۔ دیکھئیے محترمہ! آپ یہ فارم جمع نہیں کروا سکتیں، برائے مہربانی آپ گھر جائیں اور اُسے بھیجیں جس کے یہ فارم ہیں۔ میں کیوں نہیں کروا سکتی؟ میں اُس کی ماں ہوں، میں اُسے بھرتی کروائے بغیر ہرگز یہاں سے نہیں جاؤں گی۔ وہ ابھی تک اپنی بات پر ڈٹی ہوئی تھی۔

    دیکھیئے آپ میری بات شاید سمجھ نہیں پا رہیں، درخواست جمع کروانے کا ایک مخصوص طریقہ کارہوتا ہے جس کے تحت، کوئی بھی طریقہ کار ہو لیکن میں نے اُسے ہر صورت افسر بھرتی کروانا ہے۔ یہ میرا اُس سے وعدہ ہے۔ اُس نے سپاہی کی بات کاٹتے ہوئے کہا اور اردگرد کھڑے نوجوان اُس کی سادگی پر ہنس پڑے۔

    آنٹی! آپ اپنے بیٹے کا فون نمبر مجھے دیں، میں اُس سے خود بات کرتا ہوں۔ احمد نے جیب سے موبائل نکالتے ہوئے کہا، وہ اُسے مزید تماشہ نہیں بنوانا چاہتا تھا۔ ہاں ہاں بیٹا! تم بات کرو، شاید وہ تمہاری بات مان کر آجائے۔ اُس نے جلدی جلدی اپنے بیٹے کا فون نمبر احمد کو لکھواتے ہوئے کہا، احمد کی بات سن کر اُس کی آنکھوں میں ایک عجیب سی چمک اُمڈ آئی تھی۔ احمد نے نمبر ڈائل کرکے موبائل کان سے لگا لیا۔ ’’نمبر بند ہے‘‘ احمد نے کچھ دیر بعد مایوسی سے کہا۔

    میں بھی جب کال کرتی ہوں تو یہی جواب آتا ہے۔ شاید بیٹری ختم ہوگئی ہوگی۔ موبائل ہے بھی تو بہت پرانا، پہلے ضد کرتا تھا کہ نیا موبائل لے کر دو۔ اُس وقت اُس کے ابّو نہیں مانتے تھے۔ کہتے تھے کہ بچوں کے پاس بھلا موبائل کا کیا کام، اب اُس کے ابّو اچھے سے اچھا موبائل خرید کر دینے کو تیار ہیں مگر وہ نہیں مانتا۔ آجکل کے بچے ضدی بھی تو بہت ہیں ناں۔

    محترمہ! آپ یہاں کھڑی بلا وجہ اپنا وقت ضائع مت کریں۔ اگر آپ کا بیٹا فوج میں بھرتی ہونا چاہتا ہے تو اُسے خود ہی آنا پڑے گا۔ آپ کے یوں ۔۔۔۔ آپ کچھ بھی کہہ لیں، مگر میں یہاں سے نہیں جاؤں گی۔ میں صبح سے یہاں کھڑی اپنی باری آنے کا انتظار کر رہی ہوں اور آپ کہہ رہے ہیں کہ یہاں سے چلی جاؤ۔ اُس نے ایک مرتبہ پھر سپاہی کی بات مکمل ہونے سے پہلے ہی جواب دے دیا، اور اُسے مایوس لوٹنا پڑا۔ مگر پھر تھوڑی ہی دیر بعد وہی سپاہی ایک نوجوان آفیسر کے ہمراہ دوبارہ اُسے قائل کرنے کے لئے پہنچ گیا۔

    جی ماں جی! کس کے فارم جمع کروانے ہیں آپ نے؟ آفیسر نے اپنائیت سے کہا۔ اپنے بیٹے کے مگر یہ مجھے کہہ رہے ہیں کہ اگر وہ خود نہ آیا تو اُسے کوئی بھرتی نہیں کرے گا۔ میں ایسے خالی ہاتھ کیسے واپس جاؤں گی؟ اُس نے بڑی مشکل سے اپنے آنسو ضبط کرتے ہوئے کہا۔

    ماں جی! یہ درست کہہ رہے ہیں۔ اس پوسٹ کے لئے درخواست جمع کرواتے ہوئے درخواست گذار کا موجود ہونا لازمی ہے، اور یہ فارم پر بھی واضح طورپر لکھا ہے۔ آپ کا بیٹا کہاں ہے؟ وہ خود کیوں نہیں آیا؟ آفیسر نے نرمی سے پوچھا۔

    مگر وہ کیسے آئے گا؟ وہ نہیں آ سکتا ۔۔۔ میں جو آگئی ہوں۔ وہ ابھی تک پوری طرح سے اپنے موقف پر قائم تھی۔

    مگر ماں جی! ایسے۔۔ ۔ آپ اُسے بھرتی کرلیں۔ وہ یہاں نہیں آسکتا، میں اُس کی ماں ہوں۔ میں نے اُس سے وعدہ کیا ہے۔ اب وہ ہاتھ جوڑے منتیں کر رہی تھی۔

    چلیں آپ اُس کے فارم مجھے دے دیں، میں کچھ کرتا ہوں۔ آفیسر کی بات سنتے ہی اُس کا چہرہ خوشی سے دمک اُٹھا۔ اُسے شاید بیچاری کی حالت پر ترس آگیا تھا یا شاید وہ اسے محض ٹالنے کے لیے ایسا کہہ رہا تھا۔

    فارم وغیرہ تو کوئی نہیں ہیں میرے پاس، بس یہ اُس کی ایک تصویر ہے، بھرتی کرکے ابھی واپس کردینا۔ اُس نے اسکول یونیفارم میں ملبوس ایک 13، 14 سال کے بچے کی ہنستی مسکراتی تصویر افسر کو دکھاتے ہوئے کہا۔

    ’’سب کہتے ہیں کہ تیرا بیٹا شہید ہوگیا ہے، اب وہ فوج میں بھرتی نہیں ہوسکتا‘‘۔

    کیسے نہیں ہوسکتا؟ اس نے مجھ سے وعدہ لیا تھا کہ میں اسے فوج میں افسر بھرتی کرواؤں گی۔ میں کوئی پاگل نہیں ہوں، مگر کیا کروں اپنے لاڈلے سے کیا ہوا وعدہ بھی تو نبھانا ہے۔ اس نے اپنے بیٹے کی تصویر چومتے ہوئے کہا اور پھوٹ پھوٹ کر رو پڑی۔ دیکھو کتنا پیارا ہے، تمہاری طرح شکل سے ہی بڑا افسر لگتا ہے۔ اُس کی باتیں سُن کر وہاں موجود ہر شخص آبدیدہ ہوگیا تھا۔

    ’’آپ کا بیٹا فوج میں افسر بن گیا ہے، ماں جی!‘‘

    آفیسر نے سلیوٹ مارتے ہوئے کہا، اور اپنے آنسو پونچھتا ہوا واپس پلٹ گیا۔ ہم بھی آپ کے بیٹے ہیں ماں جی! آئیں میں آپ کو آپ کے گھر چھوڑ دیتا ہوں۔ آپ کا گھر کہاں ہے؟ احمد نے اُسے سہارا دیتے ہوئے پوچھا۔

    تم نے دیکھا بیٹا! اُس نے مجھے سلیوٹ کیا۔ میرا بیٹا کہتا تھا کہ ماں جب میں فوج میں افسر بنوں گا تو سب تجھے سیلیوٹ کریں گے۔ مجھے اُس نے سیلیوٹ کیا۔ آج میرا بیٹا افسر بن گیا ہے۔

    ’’شہیدوں کی ماؤں کو سلام‘
     
  7. Benign Persona

    Benign Persona FULL MEMBER

    Messages:
    274
    Joined:
    Sep 21, 2015
    Ratings:
    +1 / 501 / -0
    Country:
    Pakistan
    Location:
    China
     
  8. oFFbEAT

    oFFbEAT SENIOR MEMBER

    Messages:
    2,861
    Joined:
    Aug 27, 2011
    Ratings:
    +2 / 2,958 / -34
    Country:
    India
    Location:
    India
    If such a horrible incident couldn't stop you from 'playing games', I don't know what will....
    We're not surprised though, after-all, you have to do your 'face-saving' 'cause your own Army and ISI are responsible for this massacre....Musharraf himself admitted of 'cultivating' Taliban....
    ISI cultivated Taliban to counter Indian action against Pakistan: Musharraf - Pakistan - DAWN.COM
     
    Last edited: Dec 21, 2015
  9. ConcealCarry

    ConcealCarry FULL MEMBER

    Messages:
    785
    Joined:
    Apr 4, 2015
    Ratings:
    +1 / 573 / -4
    Country:
    Pakistan
    Location:
    Canada
    LOL....everyone knows the reality of terrorist hindus, even your PM is a known terrorist with blood of more than 2000 innocent Muslims on his hands

     
  10. Fabulous Phantom

    Fabulous Phantom FULL MEMBER

    New Recruit

    Messages:
    9
    Joined:
    Jun 29, 2016
    Ratings:
    +0 / 1 / -0
    Country:
    Pakistan
    Location:
    China
    my heart bleeds whenever i see any shaheed of APS